گوشت چھوڑ کر صرف سبزیاں کھائی جائیں تو ہڈیاں کمزور ہوسکتی ہیں

اردو نیوز! سبزی خوری کے بہت سے فوائد بھی ہیں مگر کٹڑ سبزی خور بن جانے کے کئی نقصانات بھی ہو سکتے ہیں جن میں سے ایک انتہائی تشویشناک نقصان سائنسدانوں نے اس نئی تحقیق میں بتا دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں نے اپنی اس تحقیق میں بتایا ہے کہ جو لوگ جانوروں سے حاصل ہونے والی خوراک سے مکمل اجتناب برتتے اور کٹڑ سبزی خور بن جاتے ہیں

ان کی ہڈیاں اتنی زیادہ کمزور ہو جاتی ہیں کہ ان کے ٹوٹنے کا خطرہ گوشت خوروں کی نسبت 43فیصد زیادہ ہو جاتا ہے۔رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں کا کہنا تھا کہ جو لوگ گوشت کھاتے ہیں ان کی ہڈیاں کٹڑ سبزی خوروں کی نسبت 2.3گنا کم ٹوٹتی ہیں۔ اس تحقیق میں آکسفورڈ یونیورسٹی کے نوفیلڈ ڈیپارٹمنٹ آف پاپولیشن ہیلتھ کے سائنسدانوں نے 55ہزار لوگوں کی غذائی عادات کا جائزہ لیا اور ان کی ہڈیوں کی مضبوطی سے کے ساتھ تجزیہ کرکے نتائج مرتب کیے ہیں۔ تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر ٹیمی ٹونگ کا کہنا تھا کہ ”سبزی خوروں کے جسم میں کیلشیم اور پروٹین کی کمی واقع ہو جاتی ہے جس کی وجہ سے ان کی ہڈیاں فریکچر ہونے کا خطرہ زیادہ ہوجاتا ہے۔ ہمیں کسی بھی غذائی عادت کو اپنانے سے پہلے اس کے فوائد اور نقصانات دونوں کو بغور دیکھ لینا چاہیے

اور ایسی خوراک اپنانی چاہیے جس میں ہمارا باڈی میس انڈیکس صحت مندانہ رہے۔ ہم نہ ہی انتہائی دبلے پتلے ہو جائیں اور نہ ہی موٹاپے کا شکار۔“

 

سرکہ عام طور پر کھانوں میں ذائقہ بڑھانے کے لئے استعمال ہوتا ہے لیکن حالیہ میڈیکل ریسرچ نے اسکو ذیابیطس وکینسر سمیت کئی امراض کے لئے کارگر دوا بھی ثابت کردیا ہے۔ ڈایا بیٹک جنرل کی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ ان کی تحقیق میں ثابت ہوا ہے۔ کہ ذیابیطس ٹائپ ٹو کے مریض اگر روزانہ رات سونے پہلے ایک سے دو چمچ سیب کا سرکہ استعمال کریںتو ان کے خون میں شوگر کی مقدار متوازن ہوجاتی ہے۔اُدھر ہوزونگ ایگری کلچرل یونیورسٹی چین نے بھی سرکہ پر اپنی تحقیق کے بعد انکشاف کیا ہے کہ پھلوں کا سرکہ انتہائی مہلک امراض سے بچانے میں معاون ہوتا ہے ۔ تحقیقی مطالعہ کے مطابق سیب کا سرکہ کینسر، انفیکشن، بیکٹریا کے خلاف لڑنے سمیت جسمانی وزن میں کمی اور میٹابولزم میں بہتری لانے کے لیے فائدہ مند ہے۔

تحقیق میں بتایا گیاہے کہ سرکے کا ترش ذائقہ جسم کو بلڈ گلوکوز لیول کنٹرول کرنے میں مدد دیتاہے، اس سے میٹابولک اور جسمانی وزن میں کمی میں مدد ملتی ہے جبکہ دوران خون بھی بہتر ہوتا ہے۔ تحقیق کے مطابق سرکے میں استعمال ہونے والے اجزاءکچھ اقسام کے کینسر کے خلیات کو پھیلنے سے روکنے میں بھی مدد دیتے ہیں۔محققین کا کہنا تھاکہ سرکہ بیکٹریا کش، اینٹی انفیکشن، اینٹی آکسائیڈنٹس اور صحت کے لیے دیگر فائدہ مند خوبیوں سے بھرپور ہوتا ہے۔ تحقیق کے مطابق سیب کا سرکہ کھانے کے بعد چند قطرے روزانہ استعمال کرنے سے لبلبہ کی کارکردگیپر بہتر اثر ہوتا ہے۔ اے پی جان انسٹیٹیوٹ فار کینسر ریسرچ سیب کے سرکہ کو کینسر کے مریضوں کے لئے مفید قرار دے چکا ہے ۔

ان کے مطالعہ کے مطابق سرکہ کا استعمال کرنے سے بلڈ پریشر بھی نارمل ہوجاتا ہے کیونکہ سرکہ کے اجزا شریانوں کو کھولنے میں مدد گار ہوتے ہیں تاہم اس پر مزید ریسرچ کی جارہی ہے۔ چینی ماہرین کا کہنا ہے کہ سرکہ اچھی غذا ہے لیکن یہ خالص اور معیاری ہونا چاہئےاسٹرابیری کو

نمک کے پانی میں 30 منٹ کے لیے بھگوئیں اور کمال دیکھیں”

اسٹرابیری کو نمک کے پانی میں 30 منٹ کے لیے بھگوئیں اور کمال دیکھیںپاکستان ٹائمز! اسٹرابیری کو جہاں لوگ نازک پھل کے نام سے پکارتے ہیں وہیں اس کا ذائقہ بھی کئی افراد کو بے حد پسند ہوتا ہے۔ خوش ذائقہ پھل اسٹرابیری کی افادیت سے یقیناً کوئی انکار نہیں کر سکتا لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ اِسے نمک کے پانی میں 30 منٹ تک بھگونے سے کیا ہوتا ہے؟ہم آپ کو یہ ہی بتانے جا رہے ہیں کہ مذکورہ عمل سے آپ کو کون سا بڑا فائدہ پہنچ سکتا ہےدراصل اسٹرابیریز کی رنگت اور خوشبو کی وجہ سے کئی چھوٹے چھوٹے کیڑے مکوڑے ان پر موجود ہوتے ہیں، جو انسانی آنکھ سے بچ جاتے ہیں جو پیٹ میں جا کر مختلف معدے کی بیماریوں کو جنم دیتے ہیں، بھلے ہی آپ اس پھل کو دھو کر استعمال کرتی ہوں لیکن

یہ کیڑے مکوڑے ہرگز اپنی جگہ نہیں چھوڑتے۔لہٰذا آپ کو کرنا یہ ہے کہ ایک باؤل میں پانی لیں اور اس میں ایک چمچ نمک ڈال دیں۔ اس نمک والے پانی میں تمام اسٹرابیریز کو ڈالیں اور 30 منٹ تک انتظار کریں۔اگر اس پھل پر چھوٹے اور باریک کیڑے مکوڑے ہوئے تو وہ نمک کے باعث فورا پھل کو چھوڑ دیں گے۔آپ یہ ٹوٹکا کسی بھی دوسرے نازک پھل کیلئے استعمال کر سکتے ہیں۔تاہم اگر آپ کو محسوس ہو کہ نمک مِلے پانی میں پھل کو بھگونے سے اس کا ذائقہ بدل گیا ہے تو آپ یہ عمل سادے پانی میں بھی 1 گھنٹے کے لیے کر سکتے ہیں

Leave a Comment

error: Content is protected !!