جب تمہارے جسم میں یہ ایک نشانی ظاہر ہونے لگے تو سمجھ لو کوئی آپ کیلئے دعا کررہا ہے

اردو نیوز! حضرت علی ؓ فرماتے ہیں جب تم بغیر کسی وجہ کے خوشی محسوس کرو تو یقین کرلو کوئی نہ کوئی آپ کیلئے دعا ضرور کررہا ہے۔ جس کی وجہ سے تم خود میں خوشی محسوس کررہے ہو اور تم بہت زیاد خوش ہورہے ہوایسا آپ کے ساتھ بھی لازمی ہوتا ہوگا۔ کہ جب آپ بغیر کسی وجہ کے خوش ہورہے ہوتے ہیں۔ لوگ آپ سے پوچھ رہے ہوتے ہیں۔ کہ خیریت تو ہے

آج بہت خوش نظر آرہے ہو۔ لیکن اس وقت ہمیں بھی نہیں پتا ہوتا کہ ہمارے ساتھ ایسا کیوں ہورہا ہے۔ اس کے پیچھے وجہ یہی ہوتی ہے کہکوئی آپ کیلئے بہت زیادہ دعا کررہا ہوتا ہے کہ اسی دعا کے نتیجے میں آپ کے چہرے پر خوشی کے لمحات ظاہر ہورہے ہوتے ہیں۔ وہ دعا آپ کی ماں کی ہوسکتی ہے، وہ دعا آپ کے دوست کی ہوسکتی ہے اور آپ کے قریبی شخص کی ہوسکتی ہے۔ جو آپ کیلئے دعا کررہا ہوتا ہے۔ جب ہم کسی کیلئے دعا کریں گے تو سب پہلے وہ ہمارے حق میں قبول ہوگی بعد میں دوسروں کیلئے ہوگی۔ حضور نبی اکرمﷺ نے فرمایا اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں میں پہلے تجھ سے شروع کروں گا۔ تم جو دعائیں دوسروں کیلئے مانگ رہے ہو وہ سب دعائیں میں پہل تمہارے حق میں قبول کروں گا

پہلے تمہیں دونگا پہلے تمہیں عطاء کروں گا۔ سب سے زیادہ قبول ہونیوالی دعائیں کونسی ہیں؟ یاد رکھیں نبی اکرمﷺ نے فرمایا پانچ دعائیں ضرور قبول کی جاتی ہیں۔ پہلے نمبر پر مظلوم کی دعا، دوسرے نمبر پر حاجی کی دعا، تیسرے نمبر پر مریض کی دعا، چوتھے نمبر مجاہد کی دعا او رپانچویں نمبر پر ایک مسلمان بھائی کی دعا جو دوسرے مسلمان بھائی کیلئے اس کے پیٹھ پیچھے کرتا ہے۔ حضرت ابراہیم بن ادم فرماتے ہیں میں بیت اللہ شریف ہمیشہ رات کو ایسے موقع کا متلاشی اور خواہش مند تھا کہ خانہ کعبہ خالی اور ایسے وقت میں عبادت کروں۔ ایک رات جب بارش ہورہی تھی خانہ کعبہ میں صرف میں ہی تواف کررہا تھا۔ میں نے موقع غنیمت جان کر کعبہ کے حلقے یعنی بابِ کعبہ میں ہاتھ ڈالا اور گناہوں کی پاکی اور مغفرت کی طلب کی

اور اس وقت غیب سے آواز آئی کہ تمام مخلوق مجھ سے یہی چاہتی ہے یہ سن کر میں نے کہایا اللہ آپ صرف میری ہی گناہوں کو بخش دیں۔ پھر آواز آئی اے میرے بندے تم دوسری ساری مخلوق کے متعلق ہمارے ساتھ گفتگو کرو یعنی اپنے علاوہ دوسروں کے متعلق دعا کرو لیکن اپنے لیے کوئی بات نہ کرو کیونکہ تمہارے متعلق دوسروں کا کہنا دعا کرنا زیادہ فائدہ مند ہے۔

Leave a Comment

error: Content is protected !!